پی ٹی آئی نے فیض آباد میں اسٹیج کی اجازت کے لیے درخواست دائر کردی

پاکستان تحریک انصاف نے 26 نومبر 2022 کو فیض آباد (اسلام آباد) میں دھرنا دینے کی اجازت کے لیے ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کو درخواست دائر کی۔

پی ٹی آئی رہنما واثق قیوم نے ڈی سی اسلام آباد کو درخواست دائر کی ہے۔ تفصیلات کے مطابق پارٹی کا عمران خان کی قیادت میں لانگ مارچ کے اسلام آباد پہنچنے کے بعد فیض آباد میں پرامن دھرنا دینے کا منصوبہ ہے۔

رپورٹس کے مطابق ڈی سی اسلام آباد کو درخواست موصول ہوئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ دھرنا پارٹی کے حقیقی آزادی لانگ مارچ کا تسلسل ہوگا۔ پارٹی نے انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ وہ سیکورٹی اور دیگر رسمی کارروائیوں کو یقینی بنائے۔

تازہ ترین اطلاعات اور ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی حکومت کو مطالبات تسلیم کرنے کی ڈیڈ لائن دینے اور عام انتخابات کے اعلان تک دھرنے سمیت مختلف آپشنز پر بھی غور کر رہی ہے۔

ایک اہم پیش رفت میں، 18 نومبر 2022 کو، اسلام آباد ہائی کورٹ نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) سے کہا کہ وہ وفاقی دارالحکومت میں دھرنے کے لیے این او سی کی نئی درخواست دائر کرے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس عامر فاروق نے مقامی تاجروں اور پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے اسلام آباد میں لانگ مارچ اور ممکنہ دھرنے کے حق میں دائر درخواستوں کی سماعت کی۔

یاد رہے کہ اسلام آباد کیپٹل ٹیریٹری انتظامیہ نے پہلے ہی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کو اسلام آباد میں جلسے کے لیے نو آبجیکشن سرٹیفکیٹ (این او سی) جاری کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈپٹی کمشنر اسلام آباد نے پاکستان تحریک انصاف کو وفاقی دارالحکومت میں اسلام آباد ایکسپریس وے سے شروع ہونے والی ریلی کے لیے این او سی جاری کردیا۔ این او سی میں کہا گیا ہے کہ پی ٹی آئی آئی سی ٹی انتظامیہ کے طے کردہ راستے پر چلے گی۔ ریلی کے راستے سے کوئی بھی انحراف بالآخر NOC کی منسوخی کا باعث بنے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں