پاکستان بمقابلہ انگلش ٹیم کے درمیان پہلا ٹیسٹ میچ انگلینڈ کے کھلاڑیوں کی بیماری کے باعث ملتوی ہونے کا امکان ہے۔

پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان پہلا ٹیسٹ مہمان ٹیم کے متعدد کھلاڑیوں اور آفیشلز کی بیماری کے باعث ملتوی ہونے کا امکان ہے۔

ذرائع کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) اور انگلینڈ کرکٹ بورڈ (ای سی بی) کے درمیان کل سے شروع ہونے والی سیریز کے افتتاحی میچ کو ملتوی کرنے کے حوالے سے بات چیت جاری ہے۔ راولپنڈی میں پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ سے قبل انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کم از کم 14 ارکان فوڈ پوائزننگ سے متاثر ہوئے ہیں۔

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) کے ایک بیان میں وائرل بیماری سے متاثرہ افراد کی تعداد کا ذکر نہیں کیا گیا۔ ای سی بی کے ترجمان نے تصدیق کی کہ یہ بیماریاں کوویڈ 19 سے متعلق نہیں ہیں، کھلاڑیوں کو الٹی اور اسہال کا سامنا ہے۔

پی سی بی نے ایک ٹویٹ میں کہا ، “پی سی بی اور ای سی بی پہلے پاک وی این جی ٹیسٹ کے آغاز کے بارے میں بات چیت کر رہے ہیں کیونکہ انگلینڈ کے کچھ کھلاڑی وائرل انفیکشن میں مبتلا ہیں۔”

پہلا ٹیسٹ میچ یکم دسمبر سے راولپنڈی کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔ پہلے ٹیسٹ کے ٹکٹ پہلے ہی فروخت ہو چکے ہیں اور بورڈ کو فیصلہ کرنے سے پہلے مختلف چیزوں کو دیکھنا ہوگا۔

انگلینڈ اس بات کا خاص خیال رکھے ہوئے ہے کہ وہ شیف عمر میزان کی مدد سے کیا کھاتے ہیں، جو اس دورے کے لیے ٹیم کے ساتھ گئے ہیں۔

تاہم، منگل کو، کچھ کھلاڑیوں نے بیمار ہونے کی اطلاع دی اور انہیں کہا گیا کہ وہ اپنے کمروں میں رہیں تاکہ وائرس کے پھیلاؤ کے خطرے کو محدود کیا جا سکے۔

انگلینڈ کے سابق ٹیسٹ کپتان جو روٹ نے راولپنڈی میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ سے قبل فوڈ پوائزننگ کے باعث ٹیم کے ساتھی کھلاڑیوں کے بیمار ہونے کے امکان کو مسترد کر دیا ہے۔

روٹ نے آج راولپنڈی میں ایک پریس ٹاک کے دوران ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا، ’’مجھے نہیں لگتا کہ یہ فوڈ پوائزننگ یا کووِڈ یا ایسی کوئی چیز ہے۔‘‘ واضح رہے کہ بین اسٹوکس کی قیادت میں انگلینڈ کی ٹیم پاکستان میں کھانے کے خدشات کے درمیان اپنی ٹیم کے شیف کے ساتھ پاکستان پہنچی تھی۔

انگلینڈ اور پاکستان کے درمیان تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز کا دوسرا میچ 9 دسمبر سے ملتان میں اور تیسرا میچ 17 سے 21 دسمبر تک کراچی میں کھیلا جائے گا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں