وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی نے صوبائی اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری پر دستخط کر دیئے۔

وزیراعلیٰ پرویز الٰہی نے پنجاب اسمبلی تحلیل کرنے کی سمری پر دستخط کرکے اسے سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کے حوالے کردیا ہے۔

پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے لاہور زمان پارک میں اپنی رہائش گاہ سے ویڈیو لنک کے ذریعے پارلیمانی گروپ سے گفتگو کرتے ہوئے انکشاف کیا۔

پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان نے بھی پی ڈی ایم حکومت کو مشروط مذاکرات کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ ’پی ڈی ایم ہمیں عام انتخابات کی باضابطہ تاریخ دے، ورنہ ہمارے پاس اسمبلیاں تحلیل کرنے کا اختیار ہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ اسمبلیاں تحلیل کرنے کی لڑائی میں مسلم لیگ (ق) مکمل طور پر ہمارے پیچھے ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ‘وزیراعلیٰ پرویز الٰہی نے بھی مجھے یقین دلایا ہے کہ جب میں کہوں گا کہ اسمبلی تحلیل کر دی جائے گی’۔

اس سے قبل سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے سندھ اور بلوچستان کی پارلیمانی جماعتوں کا اجلاس طلب کرلیا جس میں اسمبلیوں سے علیحدگی کے فیصلے پر غور کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نے پی ٹی آئی کے اراکین سندھ اور بلوچستان اسمبلی (ایم پی اے) کو لاہور کے زمان پارک میں اپنی رہائش گاہ پر طلب کیا۔

یاد رہے کہ 28 نومبر 2023 کو سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے تصدیق کی تھی کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی قیادت خیبرپختونخوا (کے پی) اور پنجاب اسمبلیاں تحلیل کرنے پر متفق ہوگئی ہے۔

لاہور کے زمان پارک میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے نوٹ کیا کہ پی ٹی آئی کی قیادت نے پارٹی رہنماؤں کا اجلاس منعقد کیا جس میں تمام اسمبلیاں چھوڑنے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ موجودہ حکومت کو نئے انتخابات کے لیے دباؤ ڈالا جا سکے۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘پارٹی قیادت خیبرپختونخوا (کے پی) اور پنجاب اسمبلیاں تحلیل کرنے پر متفق ہوگئی، جب کہ سندھ اور بلوچستان اسمبلیوں میں ہمارے اراکین اپنے استعفے جمع کرائیں گے۔’

قبل ازیں پی ٹی آئی کے سینئر رہنما فواد چوہدری کا دعویٰ ہے کہ الیکشن رمضان المبارک سے پہلے ہوں گے۔

انہوں نے بدھ کو یہاں جاری ایک بیان میں کہا کہ “وقت کم ہے اور ہم اسمبلیوں کی تحلیل میں مزید تاخیر نہیں کر سکتے”۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں