عمران خان کا دعویٰ ہے کہ 11 جنوری سے پہلے اعتماد کا ووٹ لیا جائے گا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے اتوار کو کہا کہ اعتماد کا ووٹ 11 جنوری 2023 سے پہلے ہو جائے گا جب کہ عام انتخابات اپریل کے مہینے تک ہونے کا امکان ہے۔

سینئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ وہ اسٹیبلشمنٹ سے رابطے میں نہیں ہیں۔ انہوں نے پیش گوئی کی کہ ملک میں عام انتخابات اپریل تک ہونے جا رہے ہیں۔

جب دو اسمبلیاں تحلیل ہو جائیں گی تو وہ عام انتخابات کرانے کی پابند ہیں۔ اسمبلیوں کی تحلیل کے بعد بھی انتخابات ملتوی ہونے کی ہمیں پرواہ نہیں ہے۔

عمران خان نے کہا کہ اسمبلیاں فوری تحلیل نہیں کیں بلکہ پارٹی ارکان سے مشاورت کے بعد کیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ وہ 11 جنوری 2023 سے پہلے اعتماد کا ووٹ لینے میں کامیاب ہو جائیں گے۔

پی ٹی آئی سربراہ نے وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ پرویز الٰہی پنجاب اسمبلی تحلیل کر دیں گے۔

قبل ازیں آج عمران خان نے بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کے یوم پیدائش پر ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ ’’ہم اپنے قائد محمد علی جناح کے پاکستان کے وژن کو محسوس کرنے میں ناکام رہنے کی ایک بڑی وجہ پاکستان کے لیے عدم موجودگی ہے۔ قانون کی حکمرانی کے ذریعے انصاف جو تمام شہریوں کے لیے قانون کے سامنے برابری کو یقینی بناتا ہے۔ یہ حقیقی آزادی، حقیقی آزادی اور شہریوں کے حقوق کے تحفظ کی طرف لے جاتا ہے۔

“یہ بدلے میں انہیں ریاست اور حکومت کی اشرافیہ کی گرفت سے بچاتا ہے۔ بدقسمتی سے پاکستان میں قانون کی حکمرانی کو کبھی قائم نہیں ہونے دیا گیا، ملک پر اشرافیہ کے قبضے نے طاقتور اداروں اور مافیاز کو قانون سے بالاتر رہنے دیا ہے گویا یہ ان کا حق ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں