شاہد آفریدی کو جرات مندانہ فیصلے کرنے کے لیے چیف سلیکٹر مقرر کیا، چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی کا کہنا ہے کہ ہم شاہد آفریدی کو “جرات مندانہ فیصلے” لینے کے لیے چیف سلیکٹر مقرر کرتے ہیں۔

سیٹھی نے پیر کو ایک انٹرویو میں کہا، “وہ ایسے شخص ہیں جسے ہم سلیکشن کمیٹی میں چاہتے ہیں جو جرات مندانہ فیصلے لے سکتا ہے۔”

دو ہفتے قبل چارج سنبھالنے والے نئے چیئرمین نے فوری طور پر سابق اسٹار آل راؤنڈر کو پی سی بی سلیکشن کمیٹی کا چیئرمین مقرر کرنے سمیت بڑی تبدیلیاں کی تھیں۔

نجم سیٹھی نے شاہد آفریدی کے سیدھے سادھے رویے کی تعریف کرتے ہوئے انہیں ایک ’’بولڈ اور خوبصورت‘‘ کھلاڑی قرار دیا۔

شاہد آفریدی قومی کرکٹ ٹیم کا عبوری چیف سلیکٹر مقرر

انہوں نے کہا کہ وہ نئے ٹیلنٹ کے ساتھ تجربہ کرنے والا شخص ہے، اس بات کا احساس کرنے کے لیے کہ پرانا اب بھی سونا کہاں ہے اور میرے خیال میں اس ٹیم میں اس کی کمی تھی جس کی وجہ سے ہمیں ٹیسٹ میچوں میں لگاتار چار شکستوں کا سامنا کرنا پڑا۔

اس سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین نجم سیٹھی نے کہا تھا کہ اگر سابق کرکٹر انٹرنیشنل کرکٹ میں واپسی کرنا چاہتے ہیں تو وہ محمد عامر کو نہیں روکیں گے۔

پیر کو عرب نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے نجم سیٹھی نے کہا کہ ’میں محمد عامر کو نہیں روکوں گا اگر وہ خود کو دوبارہ پاکستان کے لیے کھیلنے کے لیے دستیاب ہونا چاہتے ہیں۔

پی سی بی کے نومنتخب چیئرمین نے کہا کہ وہ عامر کی قومی ٹیم میں واپسی کی حمایت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک کھلاڑی جس نے اپنے جرم کا اعتراف کیا، آئی سی سی کو میچ فکسنگ اور بدعنوانی روکنے میں مدد کی اور پھر کرکٹ سے باہر ہونے کی وجہ سے پانچ سال کی سزا دی وہ واپس آنے کا مستحق ہے۔

پی سی بی کے سابق چیئرمین رمیز راجہ کی برطرفی کے بعد فاسٹ بولر کی نیشنل اکیڈمی میں واپسی کی خبریں سرخیوں میں آگئیں۔ سیٹھی نے کہا، “محمد عامر کا خیال ہے کہ پی سی بی کی سابقہ حکومت بشمول سلیکشن کمیٹی اور چیئرمین رمیز راجہ نے ان کے ساتھ منصفانہ سلوک نہیں کیا۔”

74 سالہ چیئرمین نے کہا کہ پی سی بی کی سابقہ انتظامیہ سے اختلافات کی وجہ سے عامر نے انتخاب کے لیے خود کو دستیاب نہیں کیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

Author

  • Muhammad Amir

    Muhammad Amir is working with Burj News as Senior Writer

    https://urdu.burjnews.com/author/mamirsalarzai/ mamirsalarzai@urdu.burjnews.com Amir Muhammad

اپنا تبصرہ بھیجیں