پرویز الٰہی کا اعتماد کا ووٹ غیر قانونی ہے، رانا ثناء اللہ

اپوزیشن پارٹی (پی ایم ایل این) نے بدھ کی شب پنجاب اسمبلی میں اعتماد کے ووٹ کی کارروائی کو قبول کرنے سے انکار کردیا۔

وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کے اعتماد کے ووٹ کو آئین کے خلاف اور ’غیر قانونی‘ قرار دے دیا۔

جمعرات کی صبح پنجاب اسمبلی کے باہر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے پنجاب اسمبلی گیلری سے کارروائی دیکھنے والے رانا ثناء اللہ نے کہا کہ پنجاب اسمبلی کی کارروائی 7 سے 8 گھنٹے تک بڑھا دی گئی اور دوسرا ایجنڈا 12 بجے کے بعد جاری کیا گیا جو کہ خلاف ہے۔ قوانین اور آئین”۔

“سیشن کو چھ سے سات گھنٹے تک کھینچا گیا اور پھر اچانک آدھی رات کے بعد ایک نئے سیشن کا آغاز ایک نئے ایجنڈے کے ساتھ ہوا اور اعتماد کا ووٹ بلڈوز کر دیا گیا۔”

انہوں نے مزید کہا، “پھر وہ یہ کیسے کر سکتے ہیں، تمام قوانین میں نرمی کے بعد،” انہوں نے مزید کہا۔

وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ حکمران پی ٹی آئی اور مسلم لیگ (ق) کے پاس اعتماد کے ووٹ کے لیے کافی تعداد نہیں ہے، انہوں نے مزید کہا کہ اپوزیشن کو ووٹوں کی گنتی دیکھنے کی اجازت نہیں دی گئی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کے وکلا نے لاہور ہائی کورٹ کے سامنے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ گورنر کا ڈی نوٹیفیکیشن آرڈر غیر آئینی ہے۔

“تو، انہوں نے آج آرٹیکل 130(7) کے تحت اعتماد کا ووٹ کیسے کروایا؟” اس نے پوچھا.

پنجاب اسمبلی کے سپیکر سبطین خان نے پہلے کہا تھا کہ آج کے اجلاس میں اعتماد کا ووٹ نہیں لیا جائے گا۔ تاہم، آدھی رات کو ایجنڈا تبدیل کر دیا گیا، اور دھوکہ دہی سے اعتماد کا ووٹ شروع کیا گیا۔”

لاہور ہائیکورٹ کی کارروائی:

لاہور ہائی کورٹ نے بدھ کو وزیر اعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کی درخواست پر سماعت دوبارہ شروع کر دی جس میں گورنر بلیغ الرحمان کے بطور وزیر اعلیٰ ڈی نوٹیفائی کرنے کے حکم کو چیلنج کیا گیا تھا۔

جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں جسٹس چوہدری محمد اقبال، جسٹس طارق سلیم شیخ، جسٹس عاصم حفیظ اور جسٹس مزمل اختر شبیر پر مشتمل پانچ رکنی بینچ نے پرویز الٰہی کی درخواست پر سماعت کی۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ نے بدھ کو ریمارکس دیئے کہ گورنر وزیراعلیٰ کو اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کا کہہ سکتے ہیں۔

آج کی کارروائی کے دوران پرویز الٰہی کے وکیل بیرسٹر علی ظفر نے کہا کہ گورنر وزیراعلیٰ سے اعتماد کا ووٹ لینے کا نہیں کہہ سکتے کیونکہ ان کے حقوق محدود ہیں۔

اس پر جسٹس عاصم حفیظ نے ریمارکس دیئے کہ گورنر وزیراعلیٰ سے اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ لینے کا کہہ سکتے ہیں۔

وزیر اعلیٰ کو ہمیشہ 186 ارکان کی حمایت حاصل ہونی چاہیے۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس:

گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ کی کارروائی کے بعد پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) اور اس کے اتحادیوں کے ایک حیران کن اقدام میں وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی نے صوبائی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کا فیصلہ کیا۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس سپیکر سبطین خان کی زیر صدارت ہوا۔ ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی حکومت نے حیران کن اقدام کرتے ہوئے وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی کے لیے اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

پی ٹی آئی کے نائب صدر فواد چوہدری نے ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ تحریک انصاف اور اس کے اتحادیوں نے اعتماد کے ووٹ سے قبل پنجاب اسمبلی میں 187 ارکان اسمبلی کی تعداد مکمل کر لی۔

پرویز الٰہی کا اعتماد کا ووٹ:

ڈرامائی سیشن کے بعد آخرکار اعتماد کا ووٹ سیشن ہوا۔ پنجاب اسمبلی کے سپیکر سبطین خان کی زیر صدارت اجلاس ہوا جس میں پی ٹی آئی رہنما اور رکن پنجاب اسمبلی میاں اسلم اقبال نے وزیراعلیٰ پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے قرارداد پیش کی۔

سپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خان نے اعلان کیا کہ وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی نے کامیابی سے اعتماد کا ووٹ لے لیا۔ پرویز الٰہی نے ایک بار پھر پنجاب اسمبلی میں اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا۔

صوبائی اسمبلی میں وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی پر اعتماد کے اظہار کے لیے ووٹنگ کا عمل اختتام پذیر ہوگیا۔ وزیراعلیٰ پرویز الٰہی نے 186 ایم پی ایز سے اعتماد کا ووٹ لیا۔ سپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خان نے اعلان کیا کہ وزیراعلیٰ پنجاب پرویز الٰہی نے کامیابی سے اعتماد کا ووٹ لے لیا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری نے کہا ہے کہ کسی بھی قانونی رکاوٹ کے بغیر کل پنجاب اور خیبرپختونخوا اسمبلیوں کی تحلیل متوقع ہے۔

وزیراعلیٰ پرویز الٰہی کی جانب سے اعتماد کے ووٹ کے کامیاب ہونے کے بعد لاہور میں میڈیا سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کو مطلوبہ 186 ووٹ ملے۔

اسمبلی کی کارروائی کا بائیکاٹ کرنے پر مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انہیں اعتماد کے ووٹ کی کارروائی میں حصہ لینا چاہیے تھا لیکن انہوں نے اجلاس سے بھاگنے کا انتخاب کیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں