الیکشن کمیشن صوبائی اسمبلیوں کی تحلیل کے بعد عام انتخابات کرانے کے لیے تیار

ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) ملک بھر میں عام انتخابات کرانے کے لیے تیار ہے۔

ذرائع کے مطابق اگر صوبائی اسمبلی آئینی مدت پوری ہونے پر تحلیل ہوتی ہے تو انتخابات 60 دن میں ہوں گے جب کہ قبل از وقت تحلیل ہونے کی صورت میں 90 دن میں انتخابات کرائے جائیں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ اگر گورنر نے وزیر اعلیٰ کی سمری پر دستخط نہیں کیے تو 48 گھنٹوں میں اسمبلی خود بخود تحلیل ہو جائے گی۔

اسمبلی تحلیل ہونے کے بعد وزیر اعلیٰ نگراں حکومت کے لیے اپوزیشن لیڈر کو خط لکھیں گے جس میں دونوں جانب سے نگراں وزیر اعلیٰ کے لیے دو ناموں کی سفارش الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کو ہوگی۔

ذرائع نے مزید کہا کہ اگر دونوں فریق تین دن میں وزیر اعلیٰ کی تقرری پر اتفاق رائے پر پہنچنے میں ناکام رہے تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی کے پاس جائے گا۔

پارلیمانی کمیٹی کے پاس بھی 3 دن کی ڈیڈ لائن ہوگی اور اگر فریقین پارلیمانی کمیٹی میں مسئلہ حل کرنے میں ناکام رہے تو معاملہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ECP) کو بھیج دیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق چیف الیکشن کمشنر 2 روز میں حکومت کو مشورہ دیں گے۔

پہلے اعتماد کا ووٹ لینے کے بعد اب پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے پنجاب اسمبلی تحلیل کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ گزشتہ روز پی ٹی آئی نے پنجاب اسمبلی کو تحلیل کرنے کا مشورہ گورنر بلیغ الرحمان کو ارسال کیا تھا۔ فواد چوہدری نے کہا کہ ہم نے گورنر بلیغ الرحمان کو پنجاب اسمبلی تحلیل کرنے کا مشورہ بھیجا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ اسمبلی تحلیل کرنے کا حکم 2 دن میں نافذ کر دیا جائے گا۔

پی ٹی آئی نے پنجاب اسمبلی تحلیل کرنے کا مشورہ گورنر کو بھجوا دیا۔
50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں