مریم اورنگزیب نے کہا کہ عمران خان ‘سپر کرپٹ’ تھے۔

وزیراطلاعات مریم اورنگزیب نے منگل کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کو ‘دہرے معیار’ پر آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ اگر سابق چیف آف آرمی اسٹاف (سی او اے ایس) جنرل ریٹائرڈ قمر جاوید باجوہ ہوتے تو وہ ‘سپر کرپٹ’ ہوتے۔ سپر بادشاہ’

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ حکومت نے باقاعدگی سے عدالتوں میں جا کر اپنے مقدمات کا دفاع کیا جب کہ بلین ٹری سونامی، توشہ خانہ اور کرپشن کے دیگر کیسز میں عمران خان عدالت کو جوابدہ نہیں ہیں۔

مریم اورنگزیب نے اپنے سیاسی مخالفین کے خلاف ’بوگس کیسز‘ بنانے پر پی ٹی آئی چیئرمین پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ اسرار سعید جیسے کیسز ہر گزرتے دن عمران کی حقیقت کو بے نقاب کر رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ “[ایل ڈی اے کے چیف انجینئر] اسرار سعید نے عدالت میں ایک بیان حلفی جمع کرایا ہے جس میں پی ٹی آئی حکومت کی جانب سے [وزیراعظم] شہباز شریف کے خلاف جعلی مقدمات کے ایجنڈے کو ظاہر کیا گیا ہے”۔

آج میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کے دوران شہباز شریف کے خلاف ‘بوگس مقدمات’ درج کرنے کے لیے سابق وزیراعظم کے معاون شہزاد اکبر اور ان کی ٹیم کی خدمات حاصل کی گئیں۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور فریال ترلپور سمیت متعدد افراد کو مختلف ‘بوگس مقدمات’ میں گرفتار کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شہباز شریف نے 2490 دن جیل میں گزارے اور بہت تکلیفیں برداشت کیں۔

آپ (عمران خان) عدالتوں میں پیش کیوں نہیں ہوتے؟ عدالتوں میں بہت سے مقدمات زیر التوا ہیں لیکن آپ جواب داخل نہیں کر رہے۔ ہم سب نے مقدمات کا سامنا کیا اور جیل بھی گئے۔‘‘ وزیر نے کہا۔

مریم نواز نے کہا کہ سابق وزیراعظم جنرل باجوہ کی تعریف کرتے تھے لیکن بعد میں یو ٹرن لے کر انہیں ’سپر کنگ‘ کہہ دیا۔ انہوں نے عمران خان سے کہا کہ اگر جنرل باجوہ سپر کنگ تھے تو آپ سپر کرپٹ تھے۔

اس سے قبل سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سربراہ عمران خان نے کہا تھا کہ ان کی حکومت کو ہٹانے کی کوئی امریکی سازش نہیں ہے۔ عمران خان نے کہا کہ سابق چیف آف آرمی سٹاف (سی او اے ایس) جنرل قمر جاوید باجوہ نے حکومت گرانے کا اعتراف کیا ہے۔

پی ٹی آئی کے سربراہ نے الزام لگایا کہ سابق سی او ایس قومی احتساب بیورو (نیب) کو بھی کنٹرول کر رہے تھے لیکن اس وقت کے وزیر اعظم ہر قسم کی تنقید برداشت کر رہے تھے۔

چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ پاکستان کی معیشت تاریخ کے بدترین بحران کا شکار ہے، معاشی بحران کے ساتھ ساتھ گورننس کا بھی بحران ہے۔

سابق وزیراعظم عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ بھارت کا مقبوضہ کشمیر یکطرفہ مسئلہ ہے، مغربی ممالک کی جانب سے کشمیر پر کوئی ردعمل نہیں آیا، ہمیں یوکرین روس تنازع میں پوزیشن لینے کا کہا گیا لیکن ہم نے غیر جانبدار رہنے کا فیصلہ کیا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

Author

  • Muhammad Amir

    Muhammad Amir is working with Burj News as Senior Writer

    https://urdu.burjnews.com/author/mamirsalarzai/ mamirsalarzai@urdu.burjnews.com Amir Muhammad

اپنا تبصرہ بھیجیں