ایلون مسک کی انٹرنیٹ کمپنی کا پاکستان میں سروس شروع کرنے کا معاملہ

 پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی(پی ٹی اے) کی طرف سے ایلان مسک کی انٹرنیٹ کمپنی ’سٹار لنک‘ کو پاکستان میں سروس شروع کرنے کا اجازت نامہ تاحال جاری نہیں ہو سکا۔ نیوز ویب سائٹ’پروپاکستانی‘ کے مطابق حال ہی میں مائیکروبلاگنگ پلیٹ فارم ٹوئٹر کو 44ارب ڈالر میں خریدنے والے ایلان مسک الیکٹرک کاریں بنانے والی کمپنی ٹیسلا اور خلائی تحقیقاتی کمپنی سپیس ایکس کی طرح سٹار لنک کے بھی بانی اور سربراہ ہیں، جو سیٹلائٹس کے ذریعے دنیا بھر میں انٹرنیٹ فراہم کرنے والی کمپنی ہے۔

پی ٹی اے کی مشاورت سے کچھ تنظیموں نے پاکستان میں لوگوں کی پرائیویسی کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا ہے اگر سٹار لنک کو وہاں سروس شروع کرنے کی اجازت دی گئی۔ مزید برآں، کاروباری ماڈل اور سٹار لنک کی جانب سے استعمال کی جانے والی ٹیکنالوجی کے بارے میں کچھ خدشات ہیں، جن کی عوام کو پوری طرح وضاحت نہیں کی گئی ہے۔

پی ٹی اے سٹار لنک کے ساتھ رابطے میں ہے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ایک طریقہ تیار کرنے کی کوشش کر رہا ہے کہ ان کی سروس کے آغاز سے ان کمپنیوں پر کوئی اثر نہ پڑے جو پہلے سے پاکستان میں انٹرنیٹ خدمات فراہم کر رہی ہیں۔ وہ یہ بھی یقینی بنانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ سروس کا معیار صارفین کے لیے اچھا ہو۔

پی ٹی اے کے ذرائع نے سٹار لنک انٹرنیٹ کی قیمت کے بارے میں بتایا ہے کہ سٹار لنک کی ڈیوائس کی قیمت 700ڈالر (تقریباً 1لاکھ 95ہزار روپے) ہے جبکہ اس کے 100ایم بی پی ایس انٹرنیٹ کنکشن کی ماہانہ فیس 100ڈالر (تقریباً 28 ہزار روپے)ہو گی۔ یہ قیمت پاکستان میں پہلے سے موجود کسی بھی آپٹیکل فائبر یا فکسڈ لائن انٹرنیٹ کمپنی کے پیکیجز سے بہت زیادہ ہے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں