ملک کا صدر مجھ سے استعفیٰ مانگتا رہا، شاہد خاقان عباسی

صدر نے وزیراعظم عباسی سے کئی بار استعفیٰ دینے کو کہا اور جب انہوں نے انکار کر دیا تو صدر نے عباسی کو استعفیٰ دینے پر مجبور کرنے کے لیے پارلیمنٹ کے اراکین سے استعفے جمع کر لیے۔

صدر نے کہا کہ ملک کے آئین کو بنے 50 سال ہوچکے ہیں اور اس دوران حکومت اور اداروں نے اس کی کئی شقوں کو توڑا۔ انہوں نے کہا کہ ان اداروں کے کچھ اہلکار سیاستدانوں پر پارٹیاں بدلنے کے لیے دباؤ ڈالنے کی کوشش کرتے ہیں، چاہے یہ آئین کی شقوں کے خلاف ہو۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں قبول کرنا پڑے گا کہ ہم نے غلطیاں کی ہیں، جب تک ہم اپنی غلطیاں تسلیم نہیں کریں گے تب تک مسائل کا حل نہیں نکالا جاسکتا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں