ممنوعہ فنڈنگ کیس کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا گیا

الیکشن کمیشن نے ممنوعہ فنڈنگ کیس میں گواہان کی پی ٹی آئی کی جرح کا تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا۔

  الیکشن کمیشن نے 2 اپریل کو پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس کا فیصلہ سنایا اور دو اپریل کو ممنوعہ فنڈنگ ضبط کرنے کیلئے شوکاز نوٹس جاری کیا، الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی وکیل کو جواب جمع کرانے کے لیے 6 ہفتے کا وقت دیا۔

پی ٹی آئی کے وکیل کی جانب سے اعتراض اٹھایا گیا کہ شوکاز نوٹس قانون کے مطابق نہیں ہے، الیکشن کمیشن نے ریکارڈ کی سکروٹنی کیلئے دونوں فریقین کو 8 دن کا وقت بھی دیا۔

الیکشن کمیشن نے قواعد کی خلاف ورزی کی وجہ سے پارٹی کی فنڈنگ ​​ضبط کرنے کی کارروائی شروع کردی۔ پارٹی کو کمیشن کے سامنے اپنا کیس پیش کرنے کا موقع ملا اور کمیشن نے اس پر مکمل غور کیا۔

گواہوں سے دوبارہ اپنے سوالات کے جواب دینے کے لیے کہہ کر، آپ کیس کو دوبارہ کھول سکتے ہیں اور جو کچھ ہوا اس کے بارے میں مزید معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو گواہوں پر جرح کرنے کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ کیا اور اسلام آباد ہائی کورٹ نے اس فیصلے کو برقرار رکھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں