پاک چین تعلقات قومی سلامتی کی سُرخ لکیر ہیں، مریم نواز 

مسلم لیگ (ن) کے سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر نے کہا کہ پاک چین تعلقات بہت اہم ہیں اور اگر ان میں کسی قسم کی مداخلت ہوتی ہے تو اسے قومی سلامتی کے لیے خطرہ تصور کیا جائے گا۔ سی پیک کے خلاف غیر ملکی فنڈنگ ​​سے بغاوت کی سازش ناکام ہو گئی۔

انہوں نے کہا کہ درہ خنجراب کے دوبارہ کھلنے سے دونوں اطراف کے لوگوں کی مشکلات ختم کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے پاکستان چین تجارت کو تیزی سے شروع کرنا مشکل بنا دیا ہے اور سی پیک کے تجارتی تعلقات پر بھی کچھ منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ تین سال بعد پاکستان اور چین کے درمیان تجارت سابقہ ​​سطح پر بحال ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ 2020 میں بندش کے بعد 2023 میں خنجراب پاس کا دوبارہ کھلنا خوشی کی خبر ہے۔ن لیگی سینئر نائب صدر نے کہا کہ 2016 سے سی پیک فریم ورک کے تحت یہ انتظام بہترین جا رہا تھا جو 2019 میں بند ہوگیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ خنجراب پاس کے دوبارہ کھلنے سے دونوں طرف کے عوام کی مشکلات ختم کرنے میں مدد ملے گی۔مریم نواز نے کہا کہ وزیراعظم شہبازشریف اور چینی صدر پاک چین آہنی بھائی چارے کو مزید مضبوط بنارہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی حکومت نے پاکستان چین تجارتی سرگرمیوں اور سی پیک کی رفتار متاثر کی۔ن لیگی نائب صدر نے مزید کہا کہ نواز شریف سی پیک کے معمار ہیں، چین کی مدد سے پاکستان کی ترقی کا عظیم منصوبہ شروع کیا تھا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ مسلم لیگ (ن) دور کی رفتار سے سی پیک اور پاک چین تجارت جاری رہتی تو آج عوام بدحال نہ ہوتے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں