وفاقی وزیر مفتی عبدالشکور سڑک حادثے میں جاں بحق

یہ واقعہ افطار (شام) کے قریب اس وقت پیش آیا جب وفاقی وزیر مقامی ہوٹل سے سیکرٹریٹ چوک کی طرف جارہے تھے۔

ایک بیان میں، دارالحکومت کی پولیس نے کہا کہ وزیر خود کار چلا رہے تھے جب ایک ٹویوٹا ہلکس ریوو – جس میں پانچ افراد سوار تھے – نے ڈرائیور کی طرف سے ان کی گاڑی کو ٹکر مار دی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وفاقی وزیر کو وفاقی دارالحکومت کے پولی کلینک اسپتال منتقل کیا گیا تاہم شدید اندرونی خون بہنے کے باعث وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے۔

پولیس کے مطابق سینئر پولیس افسران جائے وقوعہ پر پہنچ گئے ہیں اور وفاقی وزیر کی گاڑی کو توڑ پھوڑ کرنے والی گاڑی میں سوار افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ پانچ میں سے دو افراد زخمی ہیں۔

اسلام آباد کے انسپکٹر جنرل ڈاکٹر اکبر ناصر خان، وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب اور دیگر وفاقی وزراء بھی ہسپتال پہنچ گئے، جہاں شکور نے آخری سانس لی۔

وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے دارالحکومت کی پولیس کو ہدایت کی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائے کہ حادثے کے حوالے سے “مکمل تحقیقات” کی جائیں۔

اسلام آباد کے آئی جی خان نے ہسپتال کے باہر صحافیوں کو بتایا، “ابتدائی معلومات سے پتہ چلتا ہے کہ مفتی شکور کا انتقال سر پر چوٹ لگنے سے ہوا۔”

جے یو آئی ایف کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ مفتی شکور کی نماز جنازہ کل (اتوار) دوپہر 2 بجے لکی مروت میں ادا کی جائے گی اور انہیں ان کے آبائی شہر میں سپرد خاک کیا جائے گا۔

عالم دین 2018 کے عام انتخابات میں متحدہ مجلس عمل (ایم ایم اے) کے ٹکٹ پر این اے 51 سے رکن قومی اسمبلی (ایم این اے) منتخب ہوئے تھے۔

تعزیت
صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے بھی وفاقی وزیر کے انتقال پر اظہار افسوس کیا اور بین المذاہب ہم آہنگی کے لیے مرحوم کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔

اپنے تعزیتی بیان میں وزیر اعظم شہباز شریف نے کہا کہ شکور ایک “عملی عالم، ایک نظریاتی سیاسی کارکن اور ایک مہذب انسان” تھے۔
وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ جاں بحق وفاقی وزیر کا شمار جمعیت علمائے اسلام (ف) کے نظریاتی رہنماؤں میں ہوتا تھا۔
وزیر اعظم نے انہیں شاندار خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا، “مفتی عبدالشکور نے مذہبی امور کے وزیر کی حیثیت سے اپنے فرائض تندہی، خلوص اور ایمانداری کے ساتھ ادا کیے”۔
پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے انتقال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی وزیر کی مغفرت کی دعا کی۔ سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ وہ ان کے خاندان کے دکھ کی گھڑی میں ان کے ساتھ کھڑی ہیں۔
ثناء اللہ نے بھی شکور کے انتقال پر دکھ کا اظہار کیا اور کہا کہ جے یو آئی ف ایک مخلص سیاستدان سے محروم ہو گئی ہے۔
پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنماؤں فواد چوہدری اور فیصل جاوید نے بھی وفاقی وزیر سے تعزیت کی اور مرحوم کے لیے دعا کی۔
50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں