ن لیگ صحافیوں کو عہدے کیوں دیتی ہے؟ مریم نواز

مسلم لیگ ن کی سینئر نائب صدر اور چیف آرگنائزر مریم نواز کا کہنا ہے کہ ان کی پارٹی صحافیوں کو رشوت دینے کے لیے عہدے نہیں دیتی۔ اس کے بجائے وہ کہتی ہیں کہ یہ صحافی صحافت چھوڑ کر سیاست میں آتے ہیں۔

میرے پاس ایک سوال ہے جو واقعی مجھ پر دباؤ ڈال رہا ہے۔ کسی بھی برادری میں تفرقہ پیدا کرنا درست نہیں لگتا۔ مسلم لیگ ن (پاکستان کی ایک سیاسی جماعت) ایسا کیوں کرتی ہے؟ صحافیوں کو رشوت کیوں؟ صحافیوں کو عہدے کیوں دیتے ہو، صحافی کو وزیر بناتے ہو، یا ان کے پیشے کو بدنام کیوں کرتے ہو؟

یہ بھی پڑھیں : وزیراعظم یا وزیراعلیٰ کے لیے کوئی دلچسپی نہیں، مریم نواز

مریم نواز نے کہا کہ وہ سمجھتی ہیں کہ کسی کا صحافی بننا ٹھیک ہے، چاہے اس شخص کی اپنی سیاسی رائے ہو۔ وہ اس خیال سے متفق نہیں ہیں کہ صحافی ہونے کا مطلب یہ ہے کہ کوئی سیاست میں حصہ نہیں لے سکتا۔ ہر ایک کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ اپنی زندگی کے ساتھ کیا کرنا چاہتے ہیں اس بارے میں اپنے فیصلے خود کریں۔

اس پر سلیم صافی نے کہا کہ آپ کی پارٹی کے کچھ لوگوں نے قربانیاں دی ہیں، جیلوں میں ڈالا اور صحافیوں کے لیے کھلا چھوڑ دیا، کیا یہ صحافیوں کو رشوت دینے کا طریقہ نہیں؟ مریم نواز نے کہا کہ صحافت چھوڑ دی ہے تو رشوت کہاں سے آئی؟

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں